حمل کے اسقاط کا کیا حکم ہے؟ اور اگر ماں کی جان کو خطرہ ہو تو کیا حکم ہے؟

حمل کے اسقاط کا کیا حکم ہے؟ اور اگر حمل کو باقی رکھنے سے ماں کی جان کو خطرہ ہو تو کیا حکم ہے؟

جواب

سلام علیکم ورحمۃ اللہ و برکاتہ

اسقاط حمل شرعاً حرام ہے اور کسی بھی حال میں جائز نہیں ہے۔ ہاں اگر حمل کی بقاء ماں کی جان کے لئے خطرناک ہو تو اس حالت میں روح آنے سے پہلے اسقاط میں کوئی حرج نہیں ہے لیکن روح داخل ہونے کے بعد جائز نہیں ہے اگر چہ حمل کا باقی رہناماں کی جان کے لئے خطرناک ہی کیوں نہ ہو۔ لیکن اگر حمل کے باقی رہنے میں ماں اور جنین دونوں کی موت کا خطرہ ہو اور کسی بھی طریقے سے بچے کو بچانا ممکن نہ ہو اور ماں کو بچانا صرف اسقاط جنین کے ذریعے ممکن ہو تو اسقاط جائز ہے۔

حوالہ:

https://www.leader.ir/ur/book/106/

اگر آپ کو ہمارا جواب پسند آیا تو براہ کرم لائک کیجیئے
2
شیئر کیجئے