پوسٹ نمبر : 738 18 ملاحظات

کیا سوتیلی ماں کے ذاتی مال سے میراث لی جا سکتی ہے؟

سلام علیکم مولانا صاحب
ایک خاتون نے ایک ایسے مرد سے شادی کی جس کی پہلی بیوی فوت ہوگئی تھی اور اس کے کچھ بچے تھے۔ قضائے الہی سے اس خاتون کے کوئی اولاد نہ ہوئی پھر کچھ دن کے بعد شوہر کا انتقال ہوگیا۔ اس خاتون پر اپنا نیجی کچھ مال ہے اب اس خاتون کے مرنے کے بعد اس کا وارث کون ہے؟
شوہر کے بیٹے ، جبکہ یہ کسی طبقے میں نہیں آتے یا اس شخص کو جسے اس نے وصیت کی اور وہ دوسرے طبقے کی ایک فرد بھی ہے مثلاً بہن یا بھائی کی اولاد؟

جواب

بسم اللہ الرحمن الرحیم

سلام علیکم و رحمۃ اللہ
سوتیلی ماں کے ذاتی مال سے شوہر کے بچے میراث نہیں لے سکتے بلکہ جو اسکے شرعی وارث ہونگے وہ میراث کے حقدار ہونگے۔ مندرجہ بالا سوال کی روشنی میں چونکہ مرنے والی کے وارثین میں سے دوسرے طبقے کی ایک فرد (بہن یا بھائی کی اولاد) موجود  ہے اور میت نے وصیت  بھی کی ہے لہذا وصیت پر عمل کرنے کے بعد اگر کچھ مال بچتا ہے تو وہ  مذکورہ  وارث کو ملےگا۔
واضح  رہے کےدوسرے طبقہ میں مندرجہ ذیل افراد شامل ہیں:
 دادا، نانا اور دادی، نانی اور میت کے بہن بھائی اور اگر بہن بھائی موجود نہ ہوں تو ان کی اولاد ۔

توضیح المسائل مراجع۔ احکام میراث
https://www.tebyan.net

مزید تفصیل کے لئے رجوع کریں
http://qa.wilayat.com/post/miras-690

اگر آپ کو ہمارا جواب پسند آیا تو براہ کرم لائک کیجیئے
0
شیئر کیجئے