پوسٹ نمبر : 277 5 ملاحظات

کیا عورت شوہر کی بدتمیزی ہر طلاق لے سکتی ہے ؟

?kia awart shawr ki badtamezi par tilaqa lena ka haq rakhti hai

جواب

بسم اللہ الرحمن الرحیم

سلام علیکم ورحمۃ اللہ

  اسلام کی نظر میں شادی ایک پسندیدہ عمل اور اسکے بر خلاف طلاق ناپسندیدہ اور منفور عمل ہے۔ روایت میں وارد ہوا ہے کہ طلاق سے عرش الہی لرز جاتا ہے۔   (وسائل الشیعه»، جلد 15، صفحه 268، حدیث 7 (جلد 22، صفحه 8، چاپ آل البیت). لہذا پوری کوشش کرنی چاہیے کہ میاں بیوی آپس میں نباہ کر رہیں اور چھوٹی چھٹی مشکلوں میں جدائی کےبارے میں نہ سوچیں۔  
لیکن اگر خدا نخواستہ جدائی کی نوبت آتی ہے تو اس سلسلہ میں شرعی حکم یہ ہے کہ حق طلاق صرف شوہر کو حاصل ہے مگر یہ کہ عورت عقد کے دوران اپنے لئے اس حق کو محفوظ کر لے۔ اور اگر مرد اپنی بیوی کہ ناقابل برداشت اذیت پہنچا رہا ہے اور طلاق بھی نہیں دے رہا ہے تو عورت حاکم شرع کی طرف رجوع کرکے طلاق کا مطالبہ کر سکتی ہے۔
آیہ اللہ خامنه اى، استفتاء، س ۹۳۳؛

http://hadana.ir

https://www.sistani.org

توجہ رہے کہ صرف بدتمیزی طلاق کا سبب نہیں ہے۔

اگر آپ کو ہمارا جواب پسند آیا تو براہ کرم لائک کیجیئے
0
شیئر کیجئے