پوسٹ نمبر : 354

کتنی جگہوں پر ولیمہ مستحب ہے؟

جواب

بسم اللہ الرحمن الرحیم

سلام علیکم ورحمۃ اللہ

پانچ مواقع پر ولیمہ مستحب ہے:  شادی، بچے کی پیدائش، بیٹے کا ختنہ، گھر کی خریداری اور  مکہ سے واپسی  کے موقع پر۔
اس سلسلہ میں پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ کی حدیث مبارکہ ہے جسکو     امام موسی کاظم علیہ السلام نے نقل کیا ہے:
عَنْ أَبِي الْحَسَنِ الْأَوَّلِ (ع) أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ (ص) قَالَ: لَا وَلِيمَةَ إِلَّا فِي خَمْسٍ فِي عُرْسٍ أَوْ خُرْسٍ أَوْ عِذَارٍ أَوْ وِكَارٍ أَوْ رِكَازٍ فَالْعُرْسُ التَّزْوِيجُ وَ الْخُرْسُ النِّفَاسُ بِالْوَلَدِ وَ الْعِذَارُ الْخِتَانُ وَ الْوِكَارُ الرَّجُلُ يَشْتَرِي الدَّارَ وَ الرِّكَازُ الرَّجُلُ يَقْدَمُ مِنْ مَكَّةَ.
پانچ مواقع  کے علاوہ    ولیمہ مستحب  نہیں ہے:  شادی، بچے کی پیدائش، بیٹے کا ختنہ، گھر کی خریداری اور  مکہ سے واپسی  کے موقع پر۔
من لا یحضره الفقیه، ج3، ص402

اگر آپ کو ہمارا جواب پسند آیا تو براہ کرم لائک کیجیئے
2
شیئر کیجئے